The Origin of Our solar system

کائنات کی تخلیق اور اس میں کہکشاوں کے وجود میں آنے کا تذکرہ ہم پچھلے مضامین میں کر چکے ہیں۔ اب ہم بات کریں گے ہمارے نظام شمسی کی ابتدا کی۔ جیسا کہ زندگی سے نئی زندگی کی پیدائش ہوتی ہے ویسے ہی ستاروں سے بھی نئے ستارے بنتے رہتے ہیں۔ ستارے تباہ ہو کر سپر نووا ( supernova) بنتے ہیں اور ان سے نئے ستارے وجود میں آتے ہیں اور یہ سائیکل چلتا رہتا ہے۔

شروعاتی بادل

شروعات میں کہکشاوں کے اندر بہت زیادہ ہایئڈروجن اور ہیلیم کے بادل اور مٹی کے ذرات تھے۔ سپر نووا ( supernova) ستاروں کی وجہ سے ان زرات میں بہت زیادا ٹکراو ہوتے تھے جن سے سیارچے ( Asteroids) بنتے ہیں اور بعد میں سیارے وجود میں آتے ہیں۔ سپر نووا ( supernova) بہت گرم ستارا ہوتا ہے جو بہت تیزی سے جلتا ہے اور دھماکے سے اپنے ارد گرد سب چیزوں کو غیر متوازن کر دیتا ہے۔ ایسے حالات کی وجہ سے وہ گیس کے بادل اور زرات اکٹھے ہوتے ہیں۔

سیارچوں ( Asteroids) کی پیدائیش

Asteroid Formationہزاروں سالوں میں یہ بکھرے ہوئے گیسی مادے کشش ثقل کی وجہ سے اکٹھے ہونے شروع ہو گئے۔ بہت زیادہ دباو ہونے کی وجہ سے پروٹو ستارے ( protostars) وجود میں آئے۔ انہیں بادلوں میں پگھلی ہوئی چٹانیں بھی تھی جنہوں نے نظام شمسی کی بناوٹ میں اہم کردار ادا کیا۔ یہ چٹانیں آپس میں ملی اور سیارچوں ( Asteroids) کی تخلیق ہوئی۔ سارچے چٹانوں، دھاتوں، برف اور نامیاتی مادوں سے بنے ہوتے ہیں۔ ان سارچوں کے درمیان پروٹو ستارا اس نظام شمسی کا سورج بنا۔

سیاروں کی بناوٹ

ایک تھوری کے متابق، پروٹو سیارے کسی چٹان کے ٹکراو کی وجہ سے بکھر جاتے ہیں۔ اور باقی بچے مادے کے چھوٹے زرات جنہیں ڈبری (debris) کہتے ہیں آپس میں مل کر نسبتاً چھوٹا سیارچہ ( Asteroid) بناتے ہیں۔ جب یہ سیارچے ( Asteroids) اتنے بڑے ہو جاتے ہیں کہ ان کی کشش ثقل زیادہ تاقتور ہو جاتی ہے اور یہ اپنے ارد گرد گھومنے والے اور ڈبری (debris) کو اپنی طرف کھینچ لیتے ہیں یا پھر جو ڈبری (debris) سیارے کے مدار میں آتی ہے وہ بھی سیارے کا حصہ بن جاتی ہے۔

جب یہ پروٹو سیارہ ( proto planet) اتنا بڑا ہو جائے کہ ارد گرد سے گیس بھی کھینچھنے لگ جائے تو یہ گیس جائنٹ بن جاتا ہے۔ یہاں تک سیارہ یا ٹھوس ہو گا ہا پھر گیس جائنت بن جائے گا۔ اگر یہ سیارے ایک دوسرے کے اتنے پاس ہوں کہ کشش ثقل ایک دوسرے کو اپنی طرف کھینچے تو یہ آپس میں ٹکرا کر بڑا سیارہ بن جاتا ہے یا ان میں سے ایک سیارہ دوسرے کا چاند بن کر اس کے ارد گرد مدار میں گھومنے لگ جاتا ہے۔ا

Navigation:

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے